تازہ ترین  
Tuesday
12-12-17

تبصرہ کتاب: اے سونگ آف اے بلائنڈ برائڈ
    |     1 month ago     |    گوشہ ادب
کہتے ہیں تحفہ دینے سے محبت بڑھتی ہے اور میری نظر میں بہترین تحفہ "کتاب" ہے. کیونکہ انسان کی بہترین دوست بھی تو کتاب ہوتی ہے. آج کے دور میں کتاب دوستی کی روایت کو قائم رکھنا ادب سے محبت کا منہ بولتا ثبوت ہے. اسی محبت کے ناطے پاکستان ادب پبلشرز کے ڈائریکٹر بھائی سمیع اللہ خان نے ایک بہت پیاری کتاب ارسال کی. اردو، سرائیکی، پنجابی شاعری تو کافی پڑھی لیکن پہلی بار انگلش میں پڑھنے کا موقع ملا. یہ ایک شعری مجموعہ ہے. جو کہ محترم ظہور حسین کی تصنیف ہے. ظہور حسین بہاالدین زکریا یونیورسٹی لیہ کیمپس کے انگلش ڈیپارٹمنٹ میں کو آرڈی نیٹر ہونے کے ساتھ ایک بہت اچھے استاد، شاعر اور ڈرامہ نگار بھی ہیں. جسکا منہ بولتا ثبوت انکا یہ تازہ شاعری مجموعہ ہے. خوبصورت سے سرورق کے ساتھ اٹھاسی صفحات پر مشتمل یہ ایک بہت خوبصورت کتاب ہے. جسے پاکستان ادب پبلشرز نے پبلش کیا. کتاب میں کل 50 نظمیں ہیں. کتاب کا نام ایک
دل چھو لینے والی نظم پہ رکھا گیا ہے.
اے سونگ آف اے بلائنڈ برائڈ.
ایک اندھی دلہن کا گیت.
یہ کتاب مجھے میری شادی کے دنوں میں موصول ہوئی کتاب کے ٹائٹل کی نسبت سے میں نے سب سے پہلے اس معصوم دلہن کی نظم پڑھی. جس میں وہ اپنے بابا سے کہتی ہے.
"بابا کہاں ہیں آپ؟ مجھے بتائیں سورج کیسے نکلتا ہے؟
ندا کہتی ہے سورج سرخ رنگ کا ہوتا ہے. ندا کہتی ہے میں سرخ رنگ میں بہت پیاری لگتی ہوں. وہ کہتی ہے گلاب سرخ ہوتا
ہے. گلاب شاہانہ ہوتا ہے. کل وہ گلاب لائی
میں نے اسے چھوا اور محسوس کیا تو بہت گرم تھا
بابا مجھے گلاب کا رنگ بتائیں
ندا کہتی ہے دلہن سرخ ہوتی ہے
وہ بھی کسی دن دلہن بنے گی
دلہن سرخ ہوتی ہے، سرخ گلاب ہوتا ہے
بابا میں دلہن بننا چاہتی ہوں
بابا دلہن سرخ ہوتی ہے، سرخ گلاب ہوتا ہے
گلاب بہت خوبصورت ہوتا ہے
بابا آپ خاموش کیوں ہیں؟
کیا یہ ممکن نہیں ہے بابا؟؟
کیا میں کبھی گلاب نہیں بن سکوں گی؟؟
اوکے بابا....
صرف دیکھنے والے ہی بن سکتے ہیں.
بابا. . . میں آپ سے بہت پیار کرتی ہوں
اس نظم کو پڑھتے ہی میری آنکھیں بھر آئیں. یقینا ناصر ملک صاحب نے بہت غور و فکر کے بعد ٹائٹل منتخب کیا ہوگا.
بلاشبہ اس کتاب میں موجود تمام نظمیں ایک سے بڑھ کے ایک ہیں لیکن چند نظمیں مجھے بہت پسند آئیں.
خاص کر "محمد محمد میرے محمد، سیاہ دن، زندگی غبارے کی طرح، ٹک ٹک، روح کا سفر، ایک خواب، ایک بن باپ کے بچے کا گیت، خدا حافظ، میں برائے
فروخت ہوں اور قاتل".
ایک بن باپ کے بچے کا گیت ایسے بچے کا گیت ہے جو پتھر دل انسان کے دل کو بھی چھو سکتا ہے.
بچہ کہتا ہے;
میں معصوم ہوں لوگوں کو نہیں پہچانتا، میں بہت چھوٹا اور کمزور ہوں، تھک چکا ہوں مجھے بتائیں میرا بابا کون ہے؟
میں مزید نہیں چل سکتا، گرم سورج مجھ سے برداشت نہیں ہوتا،
دسمبر کا مہینہ ہے
میں بہت ٹھنڈ میں ہوں
خدا کےلیے مجھے بتاؤ میرا بابا کون ہے؟
اسے مجھ سے نفرت ہے
اس نے مجھے مارا ہے،
سب مجھے ناپسند کرتے ہیں
میں بیکار ہوں بوجھ ہوں،
میرا بابا آئے گا اور لے جائے گا
مہربانی کرکے مجھے بتائیں میرا بابا کون ہے؟
میری امی یہاں نہیں ہے
میرا بابا یہاں نہیں ہے
میری کوئی بات نہیں سنتا
میں اپنے بابا سے سب کی شکایت کروں گا!
مجھے بتائیں! میرا بابا کون ہے؟؟
بابا میرے پاؤں سے خون بہہ رہا ہے
میری ناک بھی گندی ہے
بابا مجھ سے کوئی پیار نہیں کرتا
بابا میں بہت بھوکا ہوں
بابا! یہ دنیا بہت بڑی
ہے. لیکن بابا میں بہت چھوٹا ہوں
بابا میں جانتا ہوں آپ کبھی نہیں آئیں گے
کیونکہ میں ایک بن باپ کا بچہ ہوں. . . .!
شاعر ہو یا رائٹر ان کے قلم سے ایسے الفاظ تب ہی نکلتے ہیں جب دلی طورپر کچھ محسوس کیا ہو.
یقینا سر ظہور حسین نے بھی کچھ ایسا دیکھا یا محسوس کیا ہوگا. تمام الفاظ روح سے لکھے ہوئے محسوس ہوتے ہیں.
اللہ ہم سب کے بابا کو سلامت رکھے.
سر ظہور حسین کی یہ چند نظمیں چند جملوں میں ہی انکی شخصیت
بیان کرتی ہیں.
یہ خداداد صلاحیت ہر کسی پہ نہیں اتاری جاتی.
اپنے جذبات کو لفظوں کا پیراہن دے کے بہت خوبصورتی کے لوگوں کے دلوں تک پہچانے کا ہنر چند خوش نصیبوں کے حصے میں آتا ہے. بلاشبہ ظہور حسین سر انہی میں سے ایک ہیں.
اللہ انکو مزید کامیابیاں دے اور محبتوں کا یہ دیا یونہی جلتا رہے. اللہ انکے قلم میں برکت پیدا کرے.
سمیع اللہ بھائی کے لیے شکریہ کا لفظ بہت معمولی لگ رہا ہے. اللہ انکی عمر دراز کرے

اور انکے ادارے پاکستان ادب پبلشرز کو کامیابیوں سے ہمکنار کرے.
Feedback
Dislike
 
Normal
 
Good
 
Excellent
 




Follow Us

Picture stories


Tv Channel
News Paper Links
Websites Links
تعارف / انٹرویو
مقبول ترین

دلچسپ و عجیب



     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2017 apkibat. All Rights Reserved