تازہ ترین  

خواب
    |     7 months ago     |    شاعری
کہاں وصال کے پہلو میں خواب سوتے ہیں
ہاں اس خیال کے پہلو میں خواب سوتے ہیں

میں اس جگہ ہوں جہاں روشنی کامسکن ہے
یہاں جمال کے پہلو میں خواب سوتے ہیں

کوئی پکار کے کہتا تھا رات بسمل سے
ذرا سنبھال کے ، پہلو میں خواب سوتے ہیں

میں ماہ و سال کےبستر سےگرد کیا جھاڑوں
کہ ماہ و سال کے پہلو میں خواب سوتے ہیں

یہ زندگی کا مسافر بھی کس نشے میں ہے
کہ اس کی چال کےپہلومیں خواب سوتے ہیں

جہاں کمال کی نوبت ہو دھوم پر زاہد
وہیں زوال کے پہلو میں خواب سوتے ہیں
Feedback
Dislike
 
Normal
 
Good
 
Excellent
 




فیس بک پیج

تصویری خبریں

ad

نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2017 apkibat. All Rights Reserved