تازہ ترین  
Wednesday
17-01-18

قصور میں ایک سات سالہ بچی زیادتی کے بعد بے دردی سے قتل ۔ ۔ ۔
    |     4 days ago     |    کالم / بلاگ
یہ خبر تھی یا قیامت ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ہر آنکھ اشکبار ہو گئی ۔ ۔ ۔ ۔ یا خدا کیا اب معصوم کلیاں بھی محفوظ نہیں ۔ ۔ ۔ ۔ کھلنے سے پہلے ہی مرجھا دیا جائے گا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
خبر اور واقعہ اندوہناک تھا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ اُس پر تبصرے حیرت ناک ۔ ۔ ۔ ۔ جب کا یہ واقعہ ہوا ۔ ۔ ۔ ۔ دیکھ رہا ہوں ۔ ۔ ۔ ۔ کالم پڑھے ۔ ۔ ۔ اظہار خیال دیکھے ۔ ۔ ۔ ۔
کوِئی کہہ رہا ۔ ۔ ۔ ۔ اللہ کیسی کو بیٹیاں ہی نا دے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ کوئی آو بیٹیاں جلا ڈالیں کا راپ آلاپ رہا ۔ ۔ ۔ ۔ کوئی قسمت کا رونا روتا نظر آیا ۔ ۔ ۔ ایک صاحب نے تو اس ملک میں رہنا ہی باعث ذلت گردان لیا ۔ ۔ ۔
اِس میں دو رائے نہیں ہیں ۔ ۔ ۔ کہ یہ حادثہ بدترین ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ تو کیا اس کا مطلب یہ ہوا ۔ ۔ ۔ ۔ خدا کیسی کو بیٹِیاں ہی نا دے ۔ ۔ ۔
دکھ اور رونا اس کا ہے ۔ ۔ ۔ کوئی یہ کہتا کیوں نا نظر آیا ۔ ۔ ۔ خُدا ایسے ہوس پرست ،درندہ نما و شیطان صفت بیٹے کیسی کو نا دے ۔ ۔ ۔
بیٹیاں ہی کیوں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ؟؟؟؟؟
کیا ہم مکہ کے وہ مشرک بننا چاہتے جو بچیاں زندہ درگور کر دیا کرتے تھے ۔ ۔ ۔ ۔ جن کو ہمارا رب کل زندہ کرئے گا ۔ ۔ تو وہ پوچھیں گئی ۔ ۔ "بای ذنب قتلت" ۔ ۔ ۔ ہمیں کس جرم میں قتل کیا گیا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ؟؟
بیٹِیاں تو خدا کی رحمت ہوتی ہیں ۔ ۔ ۔ ۔ اللہ پاک جس سے پیار کرتے ہیں ۔ ۔ ۔ ۔ اسے بیٹی جیسی رحمت سے نوازتے ہیں ۔ ۔ ۔ ۔ بیٹی عیب ہوتی تو حضور چار بیٹیوں کے باپ نا ہوتے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
بشارت نا دیتے ۔ ۔ ۔ جسے اللہ پاک نے ایک بیٹی عطا فرمائی ۔ ۔ ۔ اس نے پالا پوسا ۔ ۔ ۔ ۔ بڑا کیا ۔ ۔ ۔ ۔ پھر اس کو بہیا دیا ۔ ۔ ۔ ۔ تو کل میں اور وہ ایک ساتھ جنت میں ایسے ہوں گئے ۔ ۔ ۔ ۔ جیسے شہادت اور ساتھ والی انگلی ۔ ۔ ۔ ۔
ہمیں تباہ و برباد کیا ہماری روشن خیالی نے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ روشن خیالی ہے کیا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ؟؟؟؟
عورت کو پہلے حقوق کے نام پر سڑکوں پر لاو ۔ ۔ ۔ ۔ آزادی کے نام پر کپڑے اتارو ۔ ۔ ۔ ۔ پیار کے نام پر ہوس پوری کرو ۔ ۔ ۔ ۔ اب مطلب پورا تو یہ جا وہ جا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ اتنا سا خلاصہ ہے سارا روشن خیالی کا ۔ ۔ ۔
بیٹیاں باعث رحمت ہیں ۔ ۔ ۔ ۔ ایک بات اگر ذہن نشین رہے ہر وقت تو ۔ ۔ ۔ فساد پیدا ہی نہیں ہو سکتا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ میرے گھر میں بھی ماں، بہن اور بیٹی ہو گئی ۔ ۔ ۔ جب یہ سوچ رہے گئ ۔ ۔ تو کیسی کی ماں،بہن، بیٹی کی طرف نگاہ نہیں اٹھے گئی ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
.............................................
محمد طیب طاہر 
 فیصل آباد 
Feedback
Dislike
 
Normal
 
Good
 
Excellent
 




There is no item in the database table to display at the moment.



Comments

There is no Comments to display at the moment.



Follow Us

Picture stories


Tv Channel
News Paper Links
Websites Links
تعارف / انٹرویو
مقبول ترین

دلچسپ و عجیب



     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2017 apkibat. All Rights Reserved