تازہ ترین  

نبی کریم ﷺ کا مزاح
    |     8 months ago     |    طنزومزاح
نبی کریم ﷺ کا مزاح
(مختلف جامع کتب سے اخذ کیا ہوا نچوڑ)
حضورﷺ کی طبیعت میں بذلہ سنجی ، نرم خوئی اور کشادہ روئی بدرجہ اَتم موجود تھی۔ آپﷺ کی طبیعت میں شدت و سختی اور ترش روئی بالکل نہیں تھی۔
جیسا کہ خود قرآن کریم میں ارشاد ہے کہ :
اگر آپ ﷺ تند خو اور سخت مزاج ہوتے تو یہ لوگ آپ کے قریب نہیں آتے۔
( سورة آل عمران : 3 ، آیت : 159 )
نبی کریم ﷺ ہمہ وقت تبلیغی و دعوتی مشن میں مصروف رہنے کے باوجود کھیل کود ، تیر اندازی ، گھوڑ دور اور پیراکی کے علاوہ ازواج مطہرات اور صحابہ کرام (رضوان اللہ عنہم) سے ہنسی مذاق اور تفریحی باتیں کرتے تاہم اس میں اعتدال و توازن رکھتے۔
صحابہ کرام بھی نبی کریم ﷺ کی پیروی کرتے ہوئے ہنسی مذاق اور ایک دوسرے سے تفریح کرتے اور دل بہلاتے تھے۔
حضرت ابو سلمہ بن عبدالرحمٰنؓ روایت کرتے ہیں کہ اصحابِ رسول نہایت خوش مزاج، خوش اخلاق، کشادہ دل اور نرم خو تھے اور ایک دوسرے سے ہنسی مذاق اور دل دلگی بھی کرتے تھے۔
ایک شخص نے خدمت اقدس ﷺ میں حاضر ہوکر سواری کے لئے درخواست کی۔تو آپ ﷺنے ارشاد فرمایا کہ تم کو سواری کے لئے اونٹنی کا بچہ دوں گا۔وہ شخص حیران ہوا کیونکہ اونٹنی کا بچہ سواری کا کام کب دے سکتا ہے؟ عرض کیا: یارسول اللہ ﷺ، میں اونٹی کے بچہ کا کیا کرونگا؟ آپﷺ نے ارشاد فرمایا کہ کوئی اونٹ ایسا بھی ہوتا ہے جو اونٹنی کا بچہ نہ ہو۔(شمائل ترمذی)
-------------------
ایک مرتبہ ایک بڑھیا خدمت اقدس میں حاضر ہوئی اور عرض کی کہ یا رسول اللہﷺ میرے لئے دعا فرمائیں کہ اللہ تعالٰی مجھ کو جنت نصیب کرے۔ آپ ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ بوڑھی عورتیں جنت میں نہیں جائیں گی۔
یہ فرما کر آپﷺ نماز کے لئے تشریف لے گئے۔ اور بڑھیا نے حضور ﷺ کے الفاظ سنتے ہی زاروقطار رونا شروع کردیا۔ آپ ﷺ نماز سے فارغ ہوکر تشریف لائے تو حضرت عائشہؓ نے عرض کیا: یارسول اللہﷺ! جب سے آپ نے فرمایا کہ بوڑھی عورتیں جنت میں نہیں جائیں گی تب سے یہ بڑھیا رورہی ہے۔
آپ صلی اللہ علیہ وسلم مسکرائے اور فرمایا ’’اس سے کہہ دو کہ بوڑھی عورتیں جنت میں جائیں گی مگر جوان ہوکر۔‘‘ (شمائل۔ترمذی)
--------------------
آنحضرتﷺ کے ایک دیہاتی زاہر نامی دوست تھے جو اکثر آپ ﷺ کو ہدئے بھیجا کرتے تھے۔ ایک روز وہ بازار میں اپنی کوئی چیز بیچ رہے تھے۔اتفاق سے حضور اکرم ﷺ ادھر سے گذرے ان کو دیکھا تو بطور خوش طبعی چپکے سے پیچھے سے جاکر ان کو گود میں اٹھالیا اور بطور ظرافت آواز لگائی کہ اس غلام کو کون خریدتا ہے؟ زاہر نے کہا مجھے چھوڑ دو کون ہے؟ مڑ کر دیکھا تو حضور صلی اللہ علیہ وسلم تھے۔حضرت زاہرؓ نے کہا:
’’یارسول اللہ! مجھ جیسے غلام کو جو خریدے گا نقصان ہی اٹھائے گا۔‘‘حضورﷺ نے فرمایا ’’تم خدا کی نظر میں ناکارہ نہیں ہو ۔‘‘
-----------------------
ایک موقع پر مجلس میں کھجوریں کھائی گئیں۔ آپﷺ مزاح کے طور پر گٹلیاں نکال نکال کر حضرت علی رضی اللہ تعالٰی عنہ کے آگے ڈالتے رہے۔ آخر میں گٹھلیوں کے ڈھیر کی طرف اشارہ کرکے ان سے کہا اتنی کھجوریں تم نے کھائیں تو حضرت علی رضی اللہ عنہ نے جواباً فرمایا ہم گھٹلی سمیت نہیں کھاتے۔۔۔





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved