تازہ ترین  

احیااسلام کا داعی ۔۔نڈر بے باک صحافی الشیخ محمدابرار ظہیر
    |     6 months ago     |    تعارف / انٹرویو
ہرقسم کی تعریفات تمجیدات اللہ وحدہ لاشریک کے شایان شان ہیں ان گنت درودسلام جناب رسالت ماب خاتم النبین صلی اللہ علیہ وسلم پر سلامتی اوررحمت ہو محدثین اولیاء حفاظِ قرآن وحفاظِ حدیث وجملہ مومنین پر اللہ استقامت عطاکرے عصر حاضر کے تمام داعیان اسلام کو جنہوں نے طاغوت کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر اسلام کے علم کو بلند کررکھا ہے میری ذاتی خواہش تھی کہ جناب الشیخ محمدابرار ظہیر صاحب سے متعلق کچھ اقتباسات قلم بند کروں اسی شش وپنج میں تھا کہ استادِ محترم نے بتایا ہفت روزہ نویدضیاء کی اشاعت کے 12سال مکمل ہوگئے ہیں یہ میرے لیے مسرت کی خبرتھی اس بڑھ کر میرے لیے مسرت یہ ہے کہ خاکسار کو استادِ محترم اورنویدضیاء پر کچھ گزارشات پیش کرنے کا موق ملاہے کسی دوسرے موقع پر تفصیلی مضمون لکھوں گا چند جملے جناب کی خدمت میں پیش کرنا اپنے لیے باعث مسرت سمجھتا ہوں سب سے پہلے تو میں ہفت روزہ نویدضیاء کی ٹیم اوربالخوصوص الشیخ محمدابرار ظہیر صاحب کو ہفت روزہ نوید ضیاء کی صحافتی ومذہبی خدمت کے 12سال مکمل ہونے پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں موصوف بے پناہ خوبیوں کے مالک ہیں اگر ان کی علمی ادبی سماجی سیاسی خدمات کا جائزہ لیا جائے تو یقیناًدرجنوں صفحات لکھے جاسکتے ہیں موصوف متحرک سیاسی ومذہبی رہنماہیں آپ کا ظرف انتہائی اعلیٰ اورذہنی سطح بلند اورعرض پاک سے محبت مثالی ہے وطن عزیز کے ساتھ ساتھ مسلم امہ کے لیے آپ کے دل میں بے پناہ محبت ہے ماہانہ تھنک ٹینک مجالس کا انعقاد موصوف کی سربراہی میں ہوتارہتاہے جس میں ملکی وبین الاقوامی موضوعات پر سیر حاصل بحث اور ممکنہ مسائل کے حل پر غور کیا جاتاہے بہترین اصلاحاتی تدابیر کو ہفت روزہ نویدضیاء کا حصہ بنایاجاتاہے خاکسار کو بھی روہنگیامسلمانوں کے حوالے سے منعقدہ اجلاس میں شرکت کا موقع ملاتھا جو معلوماتی ہونے کے ساتھ ساتھ اصلاحی بھی تھا موصوف کی ادبی وصحافتی خدمات قابل تحسین اورلائق تعریف ہیں اس پر جتنی زیادہ موصوف کو مبارک باد دی جاے کم ہے نویدضیاء ایک مستند قومی اخبار کی شکل اختیار کرتاجارہا ہے اخبارمیں جھوٹی اورغیرمستند خبروں کوجگہ نہیں دی جاتی جو صحافتی معیار کی اعلیٰ مثال ہے ورنہ ایسے متعدد اخبارات ہیں جو غیرمستند خبروں اورمضامین کو اخبارات کی زینت بناتے رہتے ہیں اس کے برعکس نویدضیاء سچ کی آواز اور عام آدمی کی زبان بن کر صحافتی خدمات سرانجام دے رہا ہے اس اعلیٰ خدمت کا کریڈٹ موصوف ابرارظہیر صاحب کو جاتا ہے جو خود بھی ثقہ عالم دین ،مذہبی سکالر اورپیغام ٹی وی کے اینکر پرسن ہیں ان تمام خوبیوں کے ساتھ اخلاقی کمالات آپ کی شخصیت کا خاصہ ہیں آپ منکسرالمزاج مہمان نواز اچھی گفتار کے مالک ہیں موصوف گاہے بگاہے بین المسالک کے مابین اتحاد کے لیے کوششیں کرتے رہتے ہیں جو یقیناًوقت کی اہم ضرورت ہونے کے ساتھ ساتھ مسلم امہ کے اتحاد کا باعث بھی ہے موصوف یقیناًاپنے ہم عصروں کے لیے مشعل راہ ہیں آپ کی جماعتی وملی خدمات قابل تحسین ہیں جو کسی تعارف کی محتاج نہیں ہیں موصوف امن کے داعی اور احیاء اسلام کے فروغ کے لیے اپنے شب وروز ایک کیے ہوئے ہیں موصوف کے سینے میں مسلم امہ کی خستہ حالی کا درد موجود ہے موصوف کی فلاحی خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں کسی بھی ناگہانی آفت ومصیبت کے وقت ابرارظہیر صاحب ہمیشہ متاثرین کی مدد کرتے دکھائی دیے ہیں اندرون وبیرون ممالک کے مستحق متاثرین کی لیے آواز بلند کرنا موصوف کا خاصہ رہا ہے سیلاب متاثرین ہوں یا زلزلہ متاثرین ہمیشہ نویدضیاء ضرورت مندوں کی آواز بنا ہے سطورِ بالا میں بیان کی گئی خدمات کوئی خیالی پلاؤ نہیں ہے نہ ہی کوئی وہم ہے بلکہ یہ استاد محترم کے متعلق درست تجزیہ ہے جس کے تمام پہلو موصوف کی شخصیت میں پائے جاتے ہیں موصوف نیشنل یا پرونشل اسمبلی کے رکن نہیں ہیں نہ ہی یوسی کے چیئرمین ہیں بلکہ ایک محقق عالم دین ہیں موصوف کے دل میں اہلیان پاکستان اور مسلم امہ کی اصلاح کی لگن اورفکر موجود ہے اللہ تعالیٰ سے دعاہے اللہ موصوف کی مساعی قبول ومنظور فرمائے ۔اسلام کی خدمت کا جذبہ ہر فرد میں ہونا چاہیے ہرفرد کو اپنی ذات میں جناب ابرار ظہیر صاحب کی طرح ایک جماعت ہونا چاہیے میں سمجھتاہوں نوجوانوں کو موصوف کے تجربہ اورصلاحیتوں سے استفادہ حاصل کرنا چاہیے جناب رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد مبارک ہے تم میں بہتر وہ ہے جو لوگوں کے لیے بہتر ہے اسلامی تعلیمات ہر فرد کو دوسروں کے ساتھ صلہ رحمی محبت اوراخوت کا درس دیتی ہیں ایک مومن شب وروز اپنی اصلاح کے ساتھ ساتھ اپنے بھائیوں کی اصلاح کے لیے سرگرم رہتاہے غریبوں کی معاونت کرتا ہے بھٹکے ہوؤں کو سیدھی راہ دکھاتاہے بے یارومددگار کی مدد کرنے میں پیش پیش رہتاہے جو ان خصوصیات کا حامل ہوتا ہے وہ دنیا اورآخرت میں کامیاب ہوتا ایک دوسری روایت میں ہے کہ رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم دعافرمائی اللہ تعالیٰ اسے خوش وخرم رکھے جو میری بات سنتا ہے یاد کرتا ہے بیان کرتا ہے موصوف سیدالانبیاء صلی اللہ علیہ وسلم کی احادیث سنتے ہیں یاد کرتے اوربیان کرتے ہیں یہ شرف عظیم ہر انسان کو عطا نہیں ہوا جس کو عطا ہوا ہے وہ خوش قسمت ہے تیسرا مقام تم میں سے بہتر وہ ہے جوقرآن سیکھتا اورسکھاتا ہے سمندر کی مچھلیاں اس بندے کے لیے دعاکرتی ہیں جو علم کی جسجتو کرتاہے ابرار ظہیر صاحب علم پھیلانے کے فرائض سرانجام دے رہے ہیں موصو ف قرآن کے قاری ،حدیث کے محافظ اوراسلام کی احیاء اورفروغ کے لیے کوشاں ہیں ہرفرد کو اپنے علاقہ شہر میں ابرار ظہیر کی طرح کام کرنا چاہیے جوبیک وقت نڈر صحافی ،مبلغ ،داعی کتاب وسنت ،سماجی وفلاحی شخصیت کا حامل ہیں مختصر الکلام یہ کہ ابرار ظہیر صاحب بہترین جستجوکررہے ہیں جماعتی سرگرمیاں بڑے احسن طریقے سے سرانجام دے رہے پروفیسر علامہ ساجد میر حفظہ اللہ کی قیادت میں شہر گوجرانوالہ میں ایک تحریک کی شکل میں منزل کی طرف گامزن ہیں۔
جو بھی شامل ہوگیا ہے قافلہ اے میرمیں
جان پڑجاتی ہے راشد شعلہ بے جان میں
بدعتوں کے کالے بادل خودبخود چھٹ جائیں گے
حق وسچ کا بیج بکھیرو ذات کے کھلیان میں
محنتوں کا ثمر اللہ عطاکرتا ہے بندہ اطاعت خداوندی میں نیک نیتی کے ساتھ اپنے فرائض ادا کرتاہے۔ اللہ تعالیٰ موصوف کو صحت وتندرستی والی زندگی عطاکرے ہرقسم کی شر حسد وبعض سے محفوظ رکھے اللہ آپ کو استقامت کے ساتھ اسلام اوروطن عزیز کی زیادہ سے زیادہ خدمت کی توفیق سے نوازے ۔ 





Comments

There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved