تازہ ترین  

غزل
    |     7 months ago     |    شاعری
جو کہانی  تجهے سنانی ہے
غور سے سن بهلے پرانی  ہے  
جو مجهے شاہ زادہ کہتی ہے
میری نظروں میں  وہ  بهی رانی ہے
لوگ پتهر سے پهوڑتے ہیں سر
اس کے گاؤں  کی  یہ نشانی ہے  
اس کی نیت بهی دوست صاف نہیں  
میرے دل میں  بهی بدگمانی  ہے
اس کی باتوں  سے  لگتا ہے  مجهے دوست
وہ پری وش تو خاندانی  ہے
مجهے اس کا غرور توڑنا ہے  
اس کو اپنی انا دکهانی ہے
اسامہ زاہروی





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved