تازہ ترین  

"حضرت عمرؓ اور ہمارے حکمران"
    |     4 months ago     |    اسلامی و سبق آموز

حضرت عمرؓ کی جہاں اور بہت ساری خصوصیات ہیں وہیں ان کی سب سے بڑی خصوصیت ان کی طرز حکمرانی بھی ہے،جس سے ان کے مخالف بھی انکار نہیں کر سکتے،اور ان کے طرز حکمرانی کو آئیڈیل کے طور پر پیش کیا،جن کا نام سن کر اس وقت کی اپنے آپ کو سپر طاقت کہلانے والی روم اور ایران کی سلطنتوں کے بادشاہ بھی کانپ جاتے تھے،وہ جس کو فقیری پسند تھی، جب بیت المقدس کی فتح کے موقع پر عیسائی پادریوں نے یہ شرط رکھی کہ ہم بیت المقدس کی چابیاں خلیفة المسلمین کو دیں گے،تو اس وقت نکلے تو نہ فوج کو ہمراہ لیا، نہ محافظ ساتھ لیے،نہ خادم رکھنے کی زحمت کی،حتیٰ کہ خیمہ بھی نہیں اٹھایا جو کہیں پڑاؤ میں کام آتا،بس ایک چادر تھی کہ جب آرام کے لئے لیٹتے تو کسی درخت کے سائے میں پتھر کو سرہانہ بنا کر چادر اوپر اوڑھ لیتے،یہ وہ شخصیت ہیں کہ جس کی حکومت بائیس لاکھ مربع میل پر ہے۔
راستے میں کبھی اونٹ پر خود سوار ہوتے،کبھی اپنے غلام کو سوار کرلیتے،جو دیکھتا تو پوچھتا کہ امیر المومنین آپ ہیں؟تو جواب ملتا کہ وہ پیچھے آرہے ہیں،تو وہ حیران رہ جاتا۔
بیت المقدس کی فتح کے لئے جارہے ہیں لیکن کپڑے پیوند لگے پہنے ہوئے ہیں،کسی نے کہا کہ آپ امیر المومنین ہیں،آپ اچھے کپڑے پہن کر چلیں تو انکار کر دیا کہ یہی بہتر ہیں،ایک دفعہ صدقے کے اونٹ گم ہو گیا، تو جب تک اسے ڈھونڈ نہ لیا،چین سے نہ بیٹھے۔
جنگ کے موقع پر قاصد کے انتظار میں راستے کو بے تاب ہو کر دیکھتے رہتے،یوں ایک دن دور سے ایک سوار کو آتا دیکھ کر دیوانہ وار دوڑتے ہوئے اس کے پاس پہنچے،اور اس سے جنگ کا احوال پوچھنے لگے،قاصد عام آدمی سمجھ کر چلتا بھی رہا،جنگ کی خبر بھی دیتا رہا،راستے میں لوگ گزرتے تو امیر المومنین کہہ کر سلام کرتے،قاصد نے جب یہ معاملہ دیکھا تو اسے پتہ چلا کہ یہ تو امیر المومنین ہیں،لہذا وہ اترا،لیکن حضرت عمر ؓ نے اسے دوبارہ بیٹھنے پر مجبور کیا اور پیدل جنگ کی خبر لیتے رہے۔
رات کو شہر کا گشت کرتے کہ کسی کو کوئی پریشانی تو نہیں،اور فرماتے کہ اگر دجلہ کے کنارے کتا بھی مرگیا تو اس کے بارے میں عمر سے پوچھ ہوگی۔۔
کیا آج عمرؓ جیسے حکمران ہیں۔۔۔؟جو اپنی پیٹھ پر بوری رکھ کر کسی غریب کو دیتے ہوں،جو احتساب کے لئے اپنے آپ کو جج کے سامنے پیش کرتے ہوں،جو اپنے خادموں کو اپنی سواری پر بٹھا کر خود پیدل چلتے ہوں،جو عوام کے خزانے کی حفاظت کو اپنی ذمہ دار سمجھتے ہوں۔۔
اے الله!ہمیں حضرت عمرؓ جیسے حکمران عطا فرما۔آمین۔
Feedback
Dislike
 
Normal
 
Good
 
Excellent
 




فیس بک پیج

تصویری خبریں

ad

نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2017 apkibat. All Rights Reserved