تازہ ترین  

نیکی کے کاموں میں ایک دوسرے کی مدد کرو
    |     9 months ago     |    اسلامی و سبق آموز
نیکی کے کاموں میں ایک دوسرے کی مدد کرو قرآن مجید نیکی اور تقویٰ کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرنے کا حکم دیتا ہے ۔نیکی اب ہمدردی ،خدمت خلق ، یتیموں کی مدد اور مسکینوں کی دادرسی یا کسی بھی صورت میں ہو، نیکی کو لازم پکڑنا چاہیے دور حاضر میں انسانیت کی خدمت کرنا ایک ا ہم فریضہ کے طور پر شمار کیا جاتا ہے لیکن یہ صرف قولاً نہ ہو بلکہ عملًا بھی ہو مطلب یہ ہے کہ انسان کو اپنی ذاتی زند گی سے ہٹ کر سماجی کا م کی لئے بھی اپنے آپ کو پیش خدمت کرنا چاہیے اگر ہم تاریخ کے اوراق کو پلٹیں تو وہ بھی ا س کام کی طرف شاہد ہیں کہ خدمت خلق کا جذبہ ہر کسی میں اپنے دور میں رہا ہے ہمار ے پیغمبر حضرت محمدﷺ کی پوری زند گی خدمت خلق کا اعلیٰ نمونہ تھی نبوت سے قبل آپﷺ سماج اور معاشرہ میں خدمت خلق محتاجوں و مسکینوں کی داد رسی ،یتیموں سے ہمدردی ،پریشان حالوں کی مدد اور دیگر بہت سارے رفاہی کاموں کے حوالے سے معروف اور مشغول تھے اسلام ایک ایسادین فطرت ہے جس میں بنیادی عقائد توحید ،رسالت اور آخرت کے بعد اگر کسی چیز کی سب سے زیادہ اور بہت تاکید کے ساتھ تعلم دی گیء ہے تو وہ حقوق العباد ہے ،اسمیں خدمت خلق اور وبہود کاموں کی نہ صرف رحسین کی بلکہ اس کو عبادت کا درجہ دیا ، اور معاشرے میں مو جود محتاج یتیموں مسکینوں کی مدد کر نے پر زور دیا ہے ،انسانیت کی خدمت ایک وسیع تر مفہوم کو شامل ہے اس میں روئے زمین پر رہنے والے سارے لوگ شامل ہے خلق کے اندر روئے زمین پر رہنے والے ہر جاندار کا اطلاق ہو رتا ہے اور ان سب کے حتی الامکان خدمت کرنا ،ان کا خیال رکھنا ہمارا فرض ہے قرآن مجید نے جہاں ایمان والوں کی صفات کوبیا ن کیا ہے وہیں پر انسانیت کی خدمت یتیموں کو کھانا کھلانے اور انکے دیکھ بھال کا بھی حکم دیا ہے ،انسان کیلئے دوسروں پر اپنا مال خرچ کرنا بہت مشکل کام ہوتا ہے کیونکہ اس سے اس کو شدید محبت ہو تی ہے لیکن اگر انسان کو خدا پر پختہ یقین ہو تو وہ کبھی بھی خدا کی محبت پر مال کو ترجیح نہ دیگا ،ایسے صورت میں اس کو اپنے رب کا وعدہ یاد رہے گا "میرے راستے میں خرچ کروں میں اسے دو چند کر کے دونگا "،اس دور میں جہاں انسان کو ہر قسم کے مصائب کا سامنا ہے وہیں پر خلق خدا کی خدمت کرنا انتہائی مشکل ہے کیونکہ خدمت خلق میں جہا ں مصائب ہیں وہیں پر عوام کی زجر توبیخ اور بد گوئی کا بھی سامنا ہو تا ہے لیکن اس دور میں بھی کئی ملکی و بین الاقوامی ادارے فلاح انسانیت کے جذبے کے ساتھ کار خیر کے اس عمل میں پیش پیش ہیں ۔غربت کے احساس کا خاتمہ اور دکھی انسانیت کا مداوا کر نے کیلئے استحکام پاکستان اتحاد کا اس کام کو فروغ دینا خوش آئندہ ہے یہ ایک فلاحی ادارہ ہے جو کہ سیاست سے ہٹ کر انسانیت کی خدمت میں مشغول ہے اور ہر چیزسے بالاتر ہو کر پورے پاکستان اور بیرونی ممالک میں بھی اپنے دفاتر قائم کر چکا ہے جو محض اللہ تعالیٰ کی رضا کیلئے خدمت خلق میں مصروف ہیں استحکام پاکستان اتحاد کی چیئرپرسن محترمہ ساجدہ احمد لنگا ہ اور صدر برادرم منصور بلوچ جوکہ قابل تعریف ہیں جس طریقے سے وہ فلاحی ادارے کا نظم ضبط سنبھالے ہوئے ہیں لنگاہ صاحبہ، انکی پوری ٹیم اوران جیسے قوم کے مسیحا اور خدمت خلق کے داعی ہر دور میں لوگوں کے سب وشتم کا شکار رہے ہیں لیکن حقیقت پرست خد اشناس اور سماج کے اور سماج کے ساتھ جذبہ ہمدردی ،اور داد رسی رکھنے والے باکمال لوگ کار خیر میں بڑھ چڑھ کر اپنا کردار ادا کرتے ہیں دنیاکو تو انکے اداروں میں شک شبہ ہو تا ہے لیکن ان کو اپنے فیصلوں اور فلاحی کاموں کو فروغ دینے میں کبھی شک نہیں ہو تا ایسے لوگ حالا ت کے اتار چڑھاؤ میں خود جاکر ایک ایک حالت کا جائز لینے کے بعد اپنے ضمیر کی آواز کو بلند کرتے ہیں حالات اور زمانے کا سمجھوتہ کرنے کے بجائے انسانیت کی دکھتی پیٹھ کو سہارہ دیتے ہیں اللہ تعالیٰ سے دعاگو ہوں اللہ تعالیٰ انکی پوری ٹیم کو ہر سطح پر کامیابی دے اور عوام کو ان کے ساتھ مل کر خدمت خلق کرنے کی توفیق دے آمین ہیں لوگ وہی جہاں میں اچھے آتے ہیں جو کام دوسروں کے





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved