تازہ ترین  

تکمیل قرآن ، تکمیل بخاری و تقسیم انعامات و اسناد کی خصوصی تقریب
    |     6 months ago     |    اسلامی و سبق آموز
جو سیکھو،سبھی کو سکھاتے چلو
دیے سے دیے کو جلاتے چلو

جامعۃ المعھد خنساء رضی اللہ عنہا للبنات میں
 تکمیل قرآن ، تکمیل بخاری و تقسیم انعامات و اسناد کی خصوصی تقریب
محترمہ آپا جی ام حما دصاحبہ کی لاہور سے خصوصی آمد وخطاب۔۔۔خواتین کی  کثیر تعداد میں شرکت
2 اپریل 2018 کا دن جامعۃ المعھد خنساء رضی اللہ عنہا کی طالبات کے لئے بالخصوص اور خانیوال کی خواتین کے لئے بالعموم بہت یادگار دن تھا،کیوں کہ اس دن جامعہ کی طرف سے مرکزی عید گاہ اہل حدیث خانیوال میں تکمیل قرآن و تکمیل بخاری کی سعادت حاصل کرنے والی طالبات کے اعزاز میں ایک خصوصی اور شاندار پروگرام کا اہتمام کیا گیا۔پروگرام کے کامیاب انعقاد کے لئے آپا جی ام حسن صاحبہ،آپا جی ام جنید صاحبہ اور آپا جی ام زبیر صاحبہ نے کافی دن پہلے ہی زبردست تیاریاں شروع کردی تھیں۔جو الحمد للہ رنگ لائیں اور تقریب ما شاء اللہ بہت کامیاب اور یادگار رہی۔ پروگرام میں شرکت کے لئے مقررہ وقت سے پہلے ہی خواتین کی خوبصورت پنڈال میں آمد کا سلسلہ شروع ہوگیاتھا۔نشستیں کم پڑجانے پردوران پروگرام ہنگامی بنیادوں پر مزید نشستوں کا انتظام کیا گیا۔
تقریب کی صدارت محترمہ آپا جی ام حماد صاحبہ (لاہور) نے کی جبکہ مہمان خصوصی محترمہ پروفیسر مسز زینب مسعود صاحبہ ،پرنسپل گورنمنٹ پوسٹ گریجو ایٹ کالج برائے خواتین خانیوال اور باجی شریفاں ،باجی ام حبیبہ اور مسز عبدالغفور مہمان اعزاز تھیں۔نقابت کے فرائض باجی ام مزمل،باجی سدرہ ظفر اورباجی عمیزہ کرن نے بڑی خوبصورتی سے انجام دیے۔تقریب کا آغاز آسیہ رئیس نے تلاوت قرآن مجید سے کیا۔نعت پیش کرنے کی سعادت فضیلہ نے حاصل کی ۔ جامعہ سے فارغ التحصیل ہونے والی دو طالبات صابرہ بلال اور ثمینہ اسلم نے بہت عمدہ تقاریر کیں۔ایک چھوٹی طالبہ مریم نے پرجوش اور مدلل تقریر کرکے سب سے خوب داد حاصل کی۔حبیبہ عبدالقیوم،اقراء طیب ،الماس طیب ،آسیہ رئیس اور فاطمہ نے علم کی اہمیت، کشمیر، فلسطین اور برما کے مسلمانوں پر ہونے والے ظلم کی مذمت اور ان کے حوصلے بڑھانے کے لئے بہت خوبصورت آوازوں میں ترانے پیش کئے۔اقصٰی اور عائشہ نے شام کے مسلمانوں سے محبت کے ترانے پیش کئے۔
گورنمنٹ پوسٹ گرایجوایٹ کالج برائے خواتین خانیوال سے راقم الحروف نے ,,تربیت اولاد،، کے موضوع پر اظہار خیال کرتے ہوئے بتایا کہ تعلیم وتربیت کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔تعلیم وتربیت ،عمل اور اخلاق حسنہ کے زیور سے آراستہ ہوکر ہی انسان دنیا وآخرت کی کامیابیوں کا مستحق بن سکتا ہے۔حاضرین کو سورہ لقمان میں حضرت لقمان رحمہ اللہ کی اپنے بیٹے کو کی جانے والی نصیحتیں اور ان کی اہمیت بتائی گئی۔والدین بالخصوص والدہ کو بچوں کی صحیح تربیت کی تاکید کی گئی۔ایک شاعر کے الفاظ میں:
؂ تم شوق سے کالج میں پھلو،پارک میں پھولو۔۔۔جائز ہے غباروں میں اڑو،چرخ پہ جھولو
بس ایک سخن بند ہ عاجز کا رہے یاد۔۔۔ اللہ کو اور اپنی حقیقت کو نہ بھولو
گورنمنٹ پوسٹ گریجوایٹ کالج خانیوال سے محترم پروفیسر مفتی عبیدالرحمن صاحب جو جامعہ ہٰذامیں بخاری شریف کے معلم بھی ہیں،نے بخاری شریف کی آخری حدیث کی بہت عمدہ تشریح و وضاحت کی اور قرآن وسنت کے علم کو دنیا وآخرت کی کامیابی کی کنجی بتایا۔انہوں نے کامیاب ہونے والی خوش نصیب طالبات کو مبارک باد پیش کی۔
مہمان خصوصی مسز زینب مسعود صاحبہ نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اسلام بہترین دین ہے،دین فطرت ہے،اس لئے اس کو سیکھنا اور عمل کرنا ہمارا فرض ہے۔انہوں تکمیل قرآن کی سعادت حاصل کرنے والی حافظات اور تکمیل بخاری کرنے والی طالبات ،اساتذہ اور والدین کو مبارک باد پیش کی۔انہوں نے طالبات میں انعامات اور اسناد بھی تقسیم کیں۔
اسلامی ملک شام میں مسلمانوں بالخصوص مسلمان بچوں پر ہونے والے ظلم پر ملٹی میڈیا پر بریفنگ دی گئی،یہ روح فرسا مناظر دیکھ کر حاضرین کی آنکھیں نمناک ہوگئیں۔اس ظلم کی شدید مزمت کی گئی ۔شام کے مسلمانوں کی مدد کے لئے متفقہ لائحہ عمل طے کرنے کی ضرورت پر زور دیا گیااور خصوصی دعا کی گئی۔
محترمہ آپا جی ام حماد صاحبہ نے اپنے خطاب میں دنیا کے ساتھ ساتھ دین کے علم کے حصول پر زور دیا۔انہوں نے کہا کہ ہمارے اسلاف نے اسلام کا بول بالا کرنے کے لئے بہت قربانیاں دیں۔انہوں نے اسلام کو اوڑھنا،بچھونا بنائے رکھا۔انہوں نے پیٹ پر پتھر باندھ کر جہاد کیا،انہوں نے بے شمار قربانیاں دیں۔پاکستان حاصل کرنے کے لئے ہمارے بزرگوں نے جانی،مالی ہر طرح کی قربانیاں دیں۔محمد علی جناح نے کہا کہ ,,پاکستان تو اسی دن وجود میں آگیا تھا جس دن پہلا غیر مسلم،مسلمان ہوا تھا،،۔ہمیں پاکستان بنا بنایا مل گیا، ا س لئے ہمیں اس کی قدر نہیں ہے۔ہمیں اللہ نے بے شمار نعمتیں عطا فرمائی ہیں۔ہم چین کی نیند سوتے ہیں۔ہمارے گھر،لباس،کھانے سب بہت اعلیٰ ہیں،ہم پھر بھی غربت کا رونا روتے ہیں۔حالانکہ ہم صرف دل کے غریب ہیں۔ہم دنیا کے پیچھے بھاگ رہے ہیں۔ہم نے اللہ اور اس کے رسول ﷺ سے منہ پھیر لیا ہے۔ہم موت سے غافل ہوگئے ہیں۔ہمارے پاس دین سیکھنے کے لئے وقت نہیں مگر موبائل پر ساری ساری رات،سارا دن گپیں لگانے اور فضول کام کرنے کے لئے تو بہت کووقت ہے،قرآن وحدیث سیکھنے کا وقت نہیں،جو قابل افسوس ہے۔انہوں نے شام کے مسلمانوں کی دلخراش حالت زار کا نقشہ کھینچا اور شام کے مسلمانوں کی امداد کی تاکید کی۔انہوں نے کامیاب طالبات،اساتزہ اور والدین کو مبارک باد پیش کی اور خواتین کو اپنی بچیوں کو مدرسے میں داخل کروانے اور دین کا علم حاصل کروانے کی ترغیب دلائی۔
؂ کچل ڈالو ہر اک فتنہ ستم کا بربریت کا۔۔۔اٹھو اور توڑ ڈالو ہاتھ ہر اہل اذیت کا
اگر کچھ حریت کا جوش ہے،جذبہ حمیت کا۔۔۔رہے رب کی زمیں پرکیوں غلبہ آمریت کا
اٹھو تم دین فطرت کی حقیقت کا حوالہ ہو۔۔۔تمہارے نام ،اسلام کا پھر بول بالا ہو
محترمہ آپا جی ام حماد صاحبہ،مسز عبدالغفور صاحبہ اور راقم الحروف نے کامیاب طالبات میں اسنادوانعامات تقسیم کئے۔ادارہ کی طرف سے آپا جی ام حماد صاحبہ نے مہمان خصوصی مسز زینب مسعود صاحبہ اور راقم الحروف کو اسلامی کتابوں کے تحائف پیش کئے ۔
شعبہ حفظ میں اسناد حاصل کرنے والی طالبات کے نام یہ ہیں:اقراء طیب،آسیہ رئیس،الماس طیب،حبیبہ عبدالقیوم،حنا مشتاق،حنا اصغر
خاصہ مکمل کرنے والی طالبات درج ذیل تھیں:اقصیٰ نورین،بشریٰ پروین،نادرہ حنیف،خدیجہ مقصود،عائشہ اقبال،اسماء خلیل،عائشہ رمضان اور آمنہ دلشاد۔عالمیہ مکمل کرنے والی طالبات کے نام درج ذیل ہیں:صابرہ بلال،عمیزہ کرن اور خدیجہ ابو حفص۔
ان تمام طالبات کو اسناد سے نوازا گیا اور ان کی دوپٹہ پوشی کی گئی۔
مہمان خواتین کے لئے کھانے کا انتظام بھی کیا گیا تھا۔یوں الحمد للہ یہ کامیاب تقریب اپنے اختتام کو پہنچی۔خواتین نے کامیاب تقریب کے انعقاد پر باجی ام حسن صاحبہ،ام زبیر صاحبہ اور ام جنید صاحبہ کو مبارک باد پیش کی۔
بعد ازاں،جہانیاں اور میاں چنوں میں بھی خواتین کے بہت بڑے اجتماعات ہوئے،جن میں روزمرہ کے مسائل ومعاملات اور شام کی صورت حال پر محترمہ آپا جی ام حماد صاحبہ نے موئثر خطاب کئے۔مزید برآںآپا جی ام حماد صاحبہ نے کوٹ سجان سنگھ کے چک نمبر 110/5lاور چک نمبر108/5lسکولوں میں اساتزہ کرام اور طالبات سے خطاب کیا۔وہاں کے لوگوں نے اس طرح کے جلسوں کے گاہے بگاہے انعقاد کی ضرورت پر زور دیا۔جس پر آپا جی نے انتظامیہ سے مستقل بنیادوں پر دینی علم کے حصول کے انتظام کی تاکید کی۔
الحمد للہ دین سے لوگوں کی دلچسپی میں اضافہ کی یہ بہترین کوششیں تھیں،اللہ رب العزت سے قبولیت اور برکت کی استدعا ہے۔ 
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
رپورٹ:
پروفیسر رضیہ رحمن 






Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved