تازہ ترین  

سابق صدر کو بد عنوانی کے الزام میں 15 سال قید کی سزا سنا دی گئی
    |     1 week ago     |    انٹرنیشنل
سیئول: جنوبی کوریا کی عدالت نے سابق صدرلی میونگ باک کو بدعنوانی کے جرم میں 15 سال قید اور 1 کروڑ 15 لاکھ ڈالر جرمانے کی سزا سنادی۔

ڈان نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق  رواں برس مارچ میں صدر لی میونگ باک کی سیاسی رفیق اور سابق صدر پارک گین کے خلاف جنوبی کوریا کی پارلیمنٹ نے مواخذے کی قرار داد منظور کی تھی، جسے عدالت نے درست قرار دیتے ہوئے خاتون صدر کو عہدے سے برطرف کرنے کا حکم جاری کیا تھا۔ بعدازاں عدالت نے انہیں کرپشن کے جرم میں 33 برس قید کی سزا سنائی تھی۔ اس حوالے سے کہا جارہا ہے کہ جنوبی کوریا میں کنزوریٹو پارٹی کے خلاف اسکینڈل کے جرم ثابت ہونے سے ان کی سیاسی ساکت داؤ پر لگ گئی ہے۔ پارک گین اور لی میونگ باک سے قبل سابق آزاد خیال جنوبی کورین صدر روہو موہائین نے اپنے اور اہل خانہ کے خلاف کرپشن تحقیقات سے دلبرداشتہ ہو کر 2009 میں خودکشی کرلی تھی۔ لی میونگ باک کے خلاف عدالتی کارروائی ریاستی ٹی وی پر بھی نشر کی گئی تاہم خرابی صحت کی وجہ سے انہیں عدالت میں پیش نہیں کیا جا سکا۔
سابق صدر لی میونگ باک پر اپنی کمپنی ’داس‘ کو دھوکہ دہی سے 2 کروڑ 17 لاکھ ڈالر کا فائدہ پہنچانے اور سام سنگ کمپنی سے رشوت لینے کا الزام تھا۔
عدالت کے مطابق لی میونگ باک نے صدارتی دور 13-2008 کے دوران اور اس سے قبل بدعنوانی کی۔ لی میونگ باک نے سام سنگ کمپنی سے 54 لاکھ ڈالر رشوت وصول کی تاکہ اپنی کمپنی داس کے قانونی اخراجات پر خرچ کیے جا سکیں۔ عدالت کے مطابق لی میونگ باک اور ان کے پراسیکیوٹر کے پاس فیصلے کے خلاف اپیل کرنے کے لیے ایک ہفتے کا وقت ہے۔





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved