تازہ ترین  

انتہائی شفیق ، ملنسار اور باوقار شخصیت کے مالک منفرد کالم نگار ، معروف صحافی ایثار رانا کا خصوصی انٹرویو آپکی بات پر
    |     4 weeks ago     |    تعارف / انٹرویو
پہلے نمبر پر حضرت عمر فاروقؓ اس کے بعد ذوالفقار علی بھٹو اور نیلسن منڈیلا میرے آئیڈیل ہیں۔ ایثار رانا

مدھو بالا ،سری دیوی ، جوہی چاولہ اور عالیہ بھٹ اور مہوش حیات مجھے بہت پسند ہیں۔ گفتگو

(نئے لکھنے والے قلم و قرطاس کے میدان میں خود کو منوانے کے لیے محنت و لگن اور خلوص نیت کو اپنا شعار بنائیں ، مطالعہ وسیع کریں ، گردونواح کا بغور مشاہدہ کریں اور ضمیر کے قلم سے لکھیں ، ان شاءاللہ کامیابیاں قدم چومیں گی)۔ نئے لکھنے والوں کے لیے خصوصی مشورے


قلمی و ادبی شخصیات سے ملنے کا ہمیشہ سے ہی شوق رہا ،کبھی زندگی کے نہاں خانوں سے فرصت ملی تو وقت کو ضائع کرنا مناسب نہ سمجھا بلکہ اسے قیمتی اور اثاثہ و قلب و جاں بنا ڈالابس یہی زندگی کا حاصل ہے فی الوقت اپنی اس عادت پہ مجھے ناز ہے کیونکہ میں جانتاہوں کہ انسان سب کچھ حاصل نہیں کرسکتا چاہے وہ جتنی بھی محنت کرلے اور میں یہ بھی جانتا ہوں کہ جو حاصل ہوسکتا ہو اسے ضرور حاصل کرنا چاہیے۔سر ایثار رانا سے ملنے کی خواہش عرصہ دراز سے تھی، میرے سوشل اکاؤنٹ میں سر ایثار رانا صاحب ایڈ ہیں ایک دفعہ میں نے اپنے ایک دوست کو ویڈیو کال کی تو مجھ سے غلطی یہ ہوئی کہ کال سر ایثار رانا صاحب کو کربیٹھا جو اونھوں نے بلا تاخیر ریسیو کرلی اب سامنے سکرین پرمحترم ایثار رانا صاحب مجھے دیکھ رہے ہیں اور میں دیدے پھاڑے ان کو دیکھ رہا ہوں ۔

اور وہ انتظار میں ہیں کہ میں کچھ بولوں اور میں ہونقوں کی طرح گنگ ہوں کہ اب کیا کروں ، سر ایثار رانا صاحب میری کیفیت بھانپ گئے اونھوں نے خود ہی میرا حال چال پوچھا اور رسمی گفتگو کے بعد میں نے ان سے معذرت کی کہ سر غلطی سے نمبر لگ گیا انشاء اللہ کبھی آپ کے آفس حاضری دوں گا سر ایثار رانا صاحب نے تبسم فرمایا اور کہا ویلکم جب چاہے چلے آئیں۔اس واقعہ کے ضمن میں میں نے پلان بنا لیا کہ موقع ضائع نہیں کرنا چاہیے اس لیے لگے ہاتھوں ان کا ہلکا پھلکا انٹرویو بھی کیوں نہ کرلیا جائے اور یقین مانئیے کہ انٹرویو واقعی ہلکا پھلکا ہی کرسکا کیونکہ کچھ سوال تو مجھے ان سے ملاقات کرتے ہی بھول گئے کیونکہ ان کی شخصیت یونیک ہے انسان ان کو سننا چاہتا ہے اور خود کی بات بھی بھول جاتا ہے یعنی بندہ انٹرویو کرنے آیا تھا اور خود کا ہی انٹرویو ہوگیا۔ویسے تو سر ایثار رانا صاحب کسی تعارف کے محتاج نہیں ہیں پھر بھی مختصر تعارف کروانا ضروری سمجھتا ہوں۔

سر ایثار رانا صاحب قلمی و صحافتی حلقوں میں اپنے منفرد اسلوب اور بہترین تحاریر کی بدولت ایک منفرد اور پائیدار مقام رکھتے ہیں( نوزائیدہ صحافی و لکھاریوں کے لیے تو آپ باقاعدہ اکیڈمی کا درجہ رکھتے ہیں) روزنامہ پاکستان میں بطور گروپ ایڈیٹر خدمات سرانجام دے رہے ہیں بلاشبہ آپ وقتِ حاضر کے نامور کالم نگار، تجزیہ کار اور سب سے بڑھ کر بہت مایہ ناز و رطب اللسان سپیکر بھی ہیں(لاہور کی ادبی و صحافتی محفلوں کی جان ہیں) بے شک ایثار رانا صاحب کی صحافتی خدمات کسی سے بھی ڈھکی چھپی نہیں ہیں ۔ سر ایثار رانا صاحب کو میں استاد محترم ہی پکارتا ہوں اور میں دل سے انھیں استاذ مانتا ہوں کیونکہ وہ ان تجزیہ نگاروں میں سر فہرست ہیں جن کا اسٹائل صحافی لوگ کاپی کرناقابل فخر گردانتے ہیں، سر ایثار رانا صاحب اپنے تجزئیے میں جو اردو اور پنجابی کا تڑکا لگاتے ہیں اس سے میں ہی نہیں بلکہ ایک دنیا محفوظ ہوتی ہے اور یہ بلاشبہ آپ کا ہی اسٹائل ہے جو دلچسپ تو ہے ہی اور اس تڑکے کے ضمن میں آپ جو معاشرے اور سیاست پر چوٹ کرتے ہیں اس میں بھی اصلاحی پہلو پنہاں ہوتے ہیں۔

آخر وہ دن آہی گیا جس کا انتظار تھامیں نے سر ایثار رانا صاحب سے انٹرویو کے لیے ٹائم مانگا اور پھر انہوں نے بروز سوموار پندرہ اکتوبر دن بارہ بجے کا وقت اوکے کردیا۔ نوجوان کالم نگار ملک محمد شہباز کے ہمراہ مقررہ وقت پر روزنامہ پاکستان کے آفس حاضر ہوا۔ استقبالیہ پر آپ کا نام بتایا تو ہمیں آپ کے آفس تک رہنمائی دی گئی ،آپ نے بڑی گرم جوشی اور پرتپاک انداز میں ہمیں ویلکم کیاآپ بالکل ایزی ماحول میں کاٹن شلوارقمیص میں کسی ینگ بوائے کی طرح رونق افروز تھے اپنی اصل عمر سے بالکل کم دکھائی دے رہے تھے جبکہ بقول سر ایثار رانا صاحب پچپن کے پیٹے میں ہیں لیکن انداز ،سٹائل اور تمکنت سے آپ تیس سالہ نوجوان دکھائی دئیے اور انٹرویو کے دوران بھی آپ پیشہ ورانہ امور میں مصروف ہی نظر آئے کافی گپ شپ بھی ہوئی چائے وائے کا دور بھی چلا اور کچھ مختصر سوال ناچیز نے استاد محترم سے کئیے جو کہ قارئین کی خدمت میں درج ذیل ہیں۔

سوال:سر آپ کا سنِ پیدائش کونسا ہے؟
سر ایثار رانا:4اپریل، 1963( میں نے کہا ،سر ماشاء اللہ 4اپریل تو بہت ہی پیاری تاریخ ہے اسلامی حوالے سے دیکھا جائے تو،آپ نے تبسم فرمایا ،جی بالکل 

سوال:سر آپ کس شہر میں پیدا ہوئے؟
سر ایثار رانا: میں کورنگی (کراچی) میں پیدا ہوا۔

سوال:سر آپ کی عمر کتنی ہوگی؟
سر ایثار رانا:55سال

سوال : سر آپ نے میٹرک کب کیا اور آپ کی کوالیفکیشن کتنی ہے؟
سر ایثار رانا: میرا میٹرک 78 میں ہوا اور میں نے ڈبل ایم اے کیا ہے ،اردو میں اور جرنلزم میں

سوال: سر آپ نے کس یونیورسٹی سے ماسٹرز کیے ہیں؟
سر ایثار رانا:کراچی اور پنجاب دونوں سے

سوال:سر آپ کی شادی کس سال ہوئی؟
سر ایثار رانا:1996 میں

سوال:سر آپ نے لو میرج کی یا ارینج میرج؟
سر ایثار رانا: (ہلکے سے تبسم کے ساتھ) ارینج میرج

سوال:سر کس بات پر غصہ آتا ہے؟
سر ایثار رانا: ویسے تو ہر غلط بات پر غصہ آتا ہے لیکن نا انصافی پر بہت غصہ آتا ہے۔

سوال:سر آپ لاہور کب شفٹ ہوئے؟
سر ایثار رانا:1969 ہمارا خاندان لاہور میں شفٹ ہوا ۔

سوال: سر آپ صحافت میں کیسے آئے؟
سر ایثار رانا: ہمارا خاندانی پیشہ ہی اخبار فروشی تھا صحافت وراثت میں ملی ہے۔

سوال:سر آپ کو کھانے میں کونسی ڈش پسند ہے
سر ایثار رانا: ویسے تو ساری حلال چیزیں کھا لیتا ہوں لیکن سی فوڈ میری فیورٹ ہے

سوال:سر کونسا ڈریس آپ کو زیادہ پسند ہے؟
سر ایثار رانا: موڈ میں ہوں تو شلوار قمیص پسند ہے لیکن عموما جینز پسند کرتا ہوں۔

سوال : سر بچپن کا دور بہت یاد گار ہوتا ہے تو آپ نے بچپن کس شہر میں گزارا؟
سر ایثار رانا: جی بالکل، میرا بچپن لاہور میں ہی گزرا ہے کیونکہ تین چار سال کا تھا جب ہم لاہور شفٹ ہوئے۔

سوال:سر آپ سپورٹس تو پسند کرتے ہونگے ،کونسی گیم آپ کو پسند ہے؟
سر ایثار رانا: وائی ناٹ، بیسیکلی(بنیادی طور پر) میں خود بھی سپورٹس میں ہوں اور میری بڑی معلومات ہیں سپورٹس کے متعلق،سپورٹس کی تمام گیمز بہت دلچسپی سے دیکھتا ہوں لیکن کرکٹ نہ صرف کھیلتا ہوں بلکہ بڑے شوق سے دیکھتا بھی ہوں۔

سوال:سر زندگی میں کبھی پیار کیا ہے؟
سر ایثار رانا:کیوں نہیں !!! مجھے تو کئی مرتبہ پیار ہوا ہے ( میں ان کی بات نہ سمجھ پایا کہ وہ کیا کہنا چاہتے ہیں پھر اونھوں نے خود ہی وضاحت کی ) زندگی میں اگر کوئی پیار نہیں کرتا تو وہ انسان ہی نہیں بلکہ انسان اور حیوان میں فرق ہی پیار کا ہے،یاد رکھیں محبت کبھی ایک بار نہیں ہوتی بلکہ بار بار ہوتی ہے اور محبت کا بار بار ہونا جسمانی اور ذہنی صحت مندی کی علامت ہے۔

سوال:سر آپ مویز بھی دیکھتے ہیں گر دیکھتے ہیں تو کس ٹائپ کی موویز پسند ہیں؟
سر ایثار رانا: ہاں ! فلم دیکھتا ہوں لیکن موڈ پہ ڈہپنڈ کرتا ہے کبھی تھرلر مووی پسند کرتاہوں تو کبھی رومانٹک بھی دیکھ لیتا ہوں۔

سوال:سر پسندیدہ کھلاڑی کونسا ہے؟
سر ایثار رانا: باکسر محمد علی(میں نے کہا سر آپ محمد علی کلے کی بات کر رہے ہیں اونھوں نے کہا جی ہاں لیکن وہ جب مسلمان ہوئے تو نام کے ساتھ کلے لکھنا پسند نہیں کرتے تھے)

سوال:سر پسندیدہ اداکارہ کونسی ہے؟
سر ایثار رانا:مدھو بالا ،سری دیوی ، جوہی چاولہ اور عالیہ بھٹ اور پاکستانی اداکاراوٗں میں مہوش حیات بہت پسند ہے۔

سوال:سر آپ کو اداکار کونسا پسند ہے؟
سر ایثار رانا:وحید مراد، دلیپ کمار ،شاہ رخ خان اور عامر خان۔

سوال:سر آپ کو شاعر کونسا پسند ہے؟
سر ایثار رانا:فیض احمد فیض اور جون ایلیا ( میں نے کہا سر جون ایلیا کے دور میں اس کے ہم عصر شاعر جون ایلیا کو اس کے نظریات کی وجہ سے پسند نہیں کرتے تھے اس لیے کافی عرصہ ان کا نام لینا بھی لوگ گناہ سمجھتے تھے جواب میں رانا صاحب نے فرمایا آپ ان کی شاعری پڑھیں میں نے بھی پڑھی ہے مجھے تو اس میں اسلامی فلسفہ ہی نظر آیا ورنہ میں بھی اسے ناپسند کرلیتا اب خوامخواہ تو میں کسی سے نفرت نہیں کرسکتا)َ۔

سوال:سر صحافت میں کتنا عرصہ ہوگیا ہے آپ کو؟
سر ایثار رانا:مجھے صحافت میں تیس سال بیت گئے ہیں۔

سوال:سر سیاست میں آپ کس لیڈر سے متاثر ہیں؟
سر ایثار رانا:سب سے پہلے حضرت عمرِ فاروقؓ اس کے بعد ذوالفقار علی بھٹو اور نیلسن منڈیلا۔

سوال:سر آ پ کو رنگوں میں کونسا رنگ پسند ہے؟ اور پھول کونسا پسند ہے؟
سر ایثار رانا: ویسے تو سارے ہی رنگ اچھے ہیں لیکن بلیک رنگ میرا فیورٹ ہے اور پھولوں میں سارے پھول ہی پسند ہیں۔

سوال:سر آپ نئے لکھاریوں کے لیے کوئی پیغام دینا چاہیں گے؟
سر ایثار رانا:میرا نوزائیدہ لکھاریوں کے لیے یہی پیغام ہے کہ وہ غورو فکر سے کام لیں اور اپنے مطالعہ کو وسیع کرنے کے ساتھ ساتھ اپنی قوت مشاہدہ کو بھی پروان چڑھائیں اور ان کے ارد گرد جو تبدیلیاں وقوع پزیر ہورہی ہیں چاہے وہ کسی بھی ٹائپ کی ہوں سیاسی ہوں لسانی ہوں یا کسی بھی مکتبہ فکر کی ہوں ان کو اپنے نوٹس میں رکھ کے اور ان پہ اثر انداز ہونے والے عوامل کے بارے میں جان کر ان سے نتائج اخز کریں ،پہلے تولیں پھر بولیں اور سب سے اہم اور ضروری بات نوزائیدہ لکھاریوں کو اپنے دل اور ضمیر کی آواز پر دھیان دینا چاہیے اور اپنے دل اور ضمیر کے قلم سے لکھنا چاہیے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
انٹرویو بائی:
غلام مصطفےٰ حاذق
ایڈیٹر آپکی بات ڈاٹ کام





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved