تازہ ترین  

سب سے بڑا سچ
    |     4 weeks ago     |    افسانہ / کہانی

آنکھ بند ہو اور آدمی افسانہ ہو جاۓ ۔۔۔۔۔!

"نہیں! یہ نہیں ہو سکتا۔ ابھی کل ہی تو میری فرح سے بات ہوئی تھی۔ وہ بالکل ٹھیک ٹھاک تھی۔ اب اچانک یہ۔۔۔۔تم پاگل ہو گئی ہو کیا۔۔۔۔ مومنہ تمہیں کوئی غلط فہمی ہوئی ہے۔ خبر دینے سے پہلے تصدیق تو کر لیا کرو" وہ فرح کی موت کی خبر سُن کر ابھی تک بے یقینی کی کیفیت میں تھی کہ مومنہ کی اگلی بات سن کر اسے نہ چاہتے ہوے بھی یقین کرنا ہی پڑا ۔۔۔۔۔ "میں اس کی میت کے پاس بیٹھی ہوں اور کیا تمہیں تصدیق چاہییے "۔۔۔۔۔ الفاظ تھے کہ ایٹم بم جو کہ اس کی سماعتوں سے ٹکرا رہے تھے اور ریسیور اس کے ہاتھ سے گرتا چلا گیا۔۔

نٹ کھٹ سی فرح کی عمر ہی کیا تھی ابھی صرف اکیس برس۔۔۔ ابھی تو اس کے کھیلنے کودنے کے دن تھے۔
اس کی بہن کی بابت معلوم ہوا کہ کل اس کی طبیعت خراب ہوئی تو ہسپتال لے جایا گیا۔ چیک اپ کرنے پر پتا چلا کہ کہ اس کو تو پرانی شوگر ہے جس کی پہلے کبھی تشخیص نہیں ہوئی تھی اور اس وقت شوگر لیول کافی ہائی تھا وہ زندگی اور موت کی کش مکش میں تھی اور پھر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سب کوششیں بے سود رہ گئیں۔۔۔۔۔۔ پروانہ اجل آچکا تھا۔
موت تو بر حق ہے۔ ایک مسلمان کا ایمان ہے کہ ایک نہ ایک دن اسے دار فانی سے کوچ کرنا ہی ہے۔ لیکن فرح کی موت اس کی سوچ کو وسعت دے رہی تھی۔ یہ شوگر اتنی جان لیوا بیماری ہو سکتی ہے یہ تو کبھی اس نے سوچا ہی نہیں تھا۔ اور شوگر کی ایک بڑی وجہ سوفٹ ڈرنکس ہیں جو کہ آج کل پانی کی طرح پی جاتی ہیں۔

اور رہی بات اجل کی تو وہ تو کچھ بھی نہیں دیکھتی نہ نام، عمر اور نہ ہی عہدہ ۔۔۔۔۔۔۔۔ کیا نیک اور کیا بدنام ۔۔۔کیا بوڑھے اور کیا جوان۔۔۔۔ کیا امیر اور کیا غریب ۔۔۔۔۔۔ اس کے لیے تو سب برابر ۔۔۔۔۔۔جب پروانہ آگیا تو کسی کو اس سے فرار حاصل نہیں اور یہی اس دنیا کا سب سے بڑا سچ!!!!






Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved