تازہ ترین  

فیض میلہ میں گزرے چند لمحات
    |     3 weeks ago     |    گوشہ ادب
الحمرا ہال میں گزشتہ دو روز سے "فیض میلہ" جاری تھا اور مجھے وہاں تیسرے دن جانے کا موقع ملا۔ جب میں وہاں پہنچی ۔کیا حسین دلکش نظارہ تھا اور رش اتنا تھا کہ یوں محسوس ہو رہا تھا کہ سارا لاھور ادھر ہی امڈ آیا ہو۔ واقعی چاروں طرف میلہ کا سا سماں تھا۔ ایک طرف سے کھانے پینے کی چیزوں کی خوشبو آرہی تھی تو دوسری طرف سے کہیں گانا بجانا جاری تھا اور کہیں لوگ ڈھول کی تھاپ پر رقص کررہے تھے۔ کتابوں کے شوقیں کتاب سٹالوں پر موجود اپنی پیاس بجھاتے نظر آرہے تھے۔ بہت سے لوگ سیلفیوں میں مصروف تھے۔ تینوں ہال میں مختلف پروگرام بھی ہورہے تھے جہاں تل دھرنے کی جگہ بھی نہیں تھی۔

وہاں ٹی وی کی بھی کچھ شخصیات موجود تھیں۔ کچھ لوگ ان کے ساتھ تصویر بنانے کے لئے آگے بڑھ رہے تھے لیکن رضا کار حصار بنائے کھڑے تھے جو کسی کو ان کے قریب نہیں جانے دے رہے تھے- لیکن بعض لوگ تصویر بنا نے کے لے بھاگ کر ان کے برابر ہوتے اور اپنی خواہش پوری کرنے کی کوشش کرتے- کچھ کامیاب ہوتے اور کچھ اداس واپس آتے۔مجھے بھی کسی قریبی دوست نے کہا کہ آئیں ان کے ساتھ ایک تصویر بنائیں- میں نے انکار کرتے ہوئے کہا یہ بھی ہماری طرح کے عام لوگ ہیں لیکن ہماری محبت نے انہیں خاص بنا دیا ہے۔ ہم انہیں دیکھتے ہیں اور ان کے جیسا بننے کی کوشش کرتے ہیں۔
میرا نظریہ یہ ہے کہ ہم اپنی شخصیت سازی پر توجہ دیں اور کچھ ایسا خاص کریں کہ لوگوں کے لئے اہم بن جائیں کہ وہ ہم سے ملنے اور ہمارے ساتھ تصاویر بنانے کے خواہش مند ہوں۔کوئی ہمارے اچھے اخلاق سے، کوئی ہماری خوبصورت گفتگو سے، کوئی ہماری تحریروں سے یا کوئی ہمارے اور کسی اچھے کام سے متاثر ہو کر ہم سے چند لمحے بات کرنے کی کوشش کرے۔ تو یہ ہے کام کرنے والا۔
جب ہم خود کو خاص سمجھیں گے تو ہمیں کسی خاص شخصیت سے ملنے کے لئے اتنی بھاگ دوڑ نہیں کرنی پڑے گی۔ ان شخصیات نے اتنا بلند مقام حاصل کرنے کے لئے محنت کی ہے۔ ہم بھی کچھ ایسا کر یں کہ ہم بھی معاشرے کی ایک اہم شخصیت بن جائیں۔ کچھ ایسا کریں کہ لوگ ہمارے جانے کے بعد بھی ہمیں سالوں یاد رکھیں۔ کسی غریب سے اچھے سے بات کر لیں، کسی بھوکے کو کھانا کھلا دیں، کسی ضرورت مند کی ضرورت کو پوری کر دیں۔۔۔اگر ہم ایسا کوئی کام مسلسل اور نیک نیتی سے کرتے رہیں گے تو یقین جانئے کہ ہم ایک ایسی شخصیت بن جائیں گے جنہیں لوگ سالوں یاد رکھے گے۔
فیض میلے جیسے پروگرام ہوتے رہنے چاہئیں کیونکہ ایسے پروگراموں، سیمیناروں سے ہی پاکستان کا مثبت امیج دنیا بھر میں جائے گا اور معاشرے میں چھائی ہر سو انتہا پسندی کی فضا کے خاتمے میں بھی ایسے پروگرام بہت اہمیت کے حامل ہیں۔۔







Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved