تازہ ترین  

انڈر 19 کرکٹ ٹورنا منٹ قطر ، پاک شمع ٹیم نے مخالفین کے چھکے چھڑا دیے
    |     2 weeks ago     |    سپورٹس
خلیجی ممالک میں کھیلوں کے فروغ کا اگر اندازہ لگائیں تو قطر اس لحاظ سے ہراول دستے میں شمار کیا جاتا ہے کہ 2006 میں ایشین گیمز کے کی میزبانی کا شرف حاصل کر چکا ہے اور 2022 میں عالمی فٹ بال کپ کے انصرام کی میزبانی بھی قطر ہی سر انجام دے رہا ہے۔قطر میں فٹ بال کے بعد سب سے زیادہ کھیلی جانے والی گیم کرکٹ ہے۔گزشتہ دنوں قطر کرکٹ ایسوسی ایشن کے زیرِ سایہ انڈر 19 بین المدارس کرکٹ ٹورنامنٹ منعقد ہوا جس میں مقامی و دیگر کمیونٹی سکولز کی درجن بھر ٹیمز نے شرکت کی،فائنل میچ روائتی حریف پاک شمع سکول و کالج اور بنگلہ دیش سکول کے مابین کھیلا گیا۔فائنل میچ کے مہمان خصوصی منظور احمد اپریشنل مینجر قطر کرکٹ ایسوسی ایشن اور مہمان اعزازی عیسیٰ قطری جنرل سیکرٹری قطر ایسوسی ایشن تھے۔
پاک شمع کی ٹیم نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا اور کل 25 اوورز میں 148 رنز کا ٹارگٹ دیا جبکہ جواب میں بنگلہ دیش کی ٹیم 58 رنز پر ہی ڈھیر ہو کر پویلین میں واپس چلی گئی۔اس طرح یہ فائنل پاک شمع کی ٹیم نے بآسانی جیت کر مسلسل چوتھی بار یہ ٹائٹل اپنے نام کیا۔پاک شمع کو یہ اعزاز بھی حاصل ہے کہ وہ u-14 اور u-16 کی بھی ونر ہے ۔میچ کے اختتام پر کھلاڑیوں میں انعامات بدست منظور احمد و عیسیٰ قطری تقسیم کئے گئے۔پاک شمع کی ٹیم کے کپتان حسین خان کو مین آف سی میچ،پلئیر آف دی ٹورنامنٹ اور بہترین بلے باز کے انعامات سے نوازا گیا۔جیت کی خوشی میں کالج انتظامیہ کی طرف سے بھی ایک مختصر تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں ایم اے شاہدؔ مینجنگ ڈائریکٹر اور نبیلہ کوکب پرنسپل نے ٹیم کے کھلاڑیوں اور کوچ عبدالرحمان چوہان کی محنت کو سراہتے ہوئے کہا کہ بلاشبہ تعلیم کے ساتھ ساتھ بچوں کی زندگی میں کھیل کی بھی اہمیت ہوتی ہے اور ایک صحت مند جسم میں ہی صحت مند دماغ پرورش پاتا ہے،کھیل بچوں میں برداشت،تحمل،جذبہ اور استقامت پیدا کرتا ہے اور ہم سمجھتے ہیں کہ کوچ عبدالرحمان نے یہ کام بخوبی سر انجام دے رہا ہے۔جس کا ایک ثبوت یہ ہے کہ ہماری ٹیم مسلسل چوتھی بار یہ اعزاز حاصل کر پائی ہے۔امید ہے کامیابیوں کا یہ سلسلہ مستقبل میں بھی جاری و ساری رہے گا۔





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved