تازہ ترین  

سنو تم لوٹ آؤ نا
    |     9 months ago     |    شاعری

سنو تم لوٹ آؤ نا
تم بن دل نہیں لگتا
کبھی تو رات نہیں ڈھلتی
اور اکثر دن نہیں چڑھتا
بارونق شہر میں مجھ کو
کچھ بھی اچھا نہیں لگتا
میری آنکھیں دکھتی ہیں
میں سکوں سے سو نہیں سکتا
سنو تم جب سے دور ہوگئے ہو
مجھے نفرت سی ہو گئ ہے
خود اپنی ہی باتوں سے
خود اپنے ہی خوابوں سے
اپنی پُر نَم آنکھوں سے
اُکھڑی اُکھڑی سانسوں سے
سنو میرا بس نہیں چلتا
میں باتیں چھوڑ دوں کرنا
میں خوابوں کو زھر دے دوں
میں آنکھیں نوچ لوں اپنی
میں سانسیں روک دوں اپنی
مگر کچھ کر نہیں سکتا
میں اتنا بے بس ہوں کے
میں خود ہی مر نہیں سکتا
سنو تم لوٹ آؤ نا
کےتم بن دل نہیں لگتا
میں جینا تو چاہتا ہوں
میں تم بن جی نہیں سکتا
سنو تم لوٹ آؤ نا۔ انتخاب چوہدری بابر
Feedback
Dislike
 
Normal
 
Good
 
Excellent
 




فیس بک پیج

تصویری خبریں

ad

نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

مقبول ترین

اسلامی و سبق آموز


     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2017 apkibat. All Rights Reserved