تازہ ترین  

مجھ سے وفا کے جذبوں کو مارا نہیں گیا
    |     2 months ago     |    شعر و شاعری
مجھ سے وفا کے جذبوں کو مارا نہیں گیا
آنکھوں سے میری عکس تمہارا نہیں گیا

دھندلا گیا جو نقش نکھارا نہیں گیا
آنکھوں میں حسرتوں کو ابھارا نہیں گیا

نظروں سے تیری گر کے گوارا نہ تھی حیات
اس راستے سے خود کو گزارا نہیں گیا

دن کا قرار، نیند تو شب کی مری لٹی
اس معرکے میں کچھ بھی تمہارا نہیں گیا

جب سے ترا فراق ہے اس دل میں شعلہ زن
دیوار و در کو مجھ سے سنوارا نہیں گیا

مانگی نہیں ہے میں نے کبھی بھیک میں وفا
مجھ سے کبھی ضمیر کو ہارا نہیں گیا

چھپ جائیں جس کی تہہ میں کئی بد نما نقوش
وہ روپ مجھ سے شہر میں دھارا نہیں گیا

زریؔاب پھر کسی کی تمنا نہیں رہی
پھر دل میں کوئی شخص اتارا نہیں گیا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔
شاعرہ: ہاجرہ نور زریاب 
آکولہ مہاراشٹر انڈیا






Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


اہم خبریں

تازہ ترین کالم / مضامین


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved