تازہ ترین  

مسئلہ کشمیراقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق حل کیا جانا چاہیے، وائس چانسلر پروفیسر نیازا حمد
    |     2 months ago     |    اہم خبریں
لاہور (آپکی بات ڈاٹ کام) وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی پروفیسر نیاز احمدا ختر نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مسئلہ کشمیر اپنی قراردادوں کے مطابق حل کرے اور انسانی حقوق کی عالمی تنطیمیں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کا سنجیدگی سے نوٹس لیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر آج کی دنیا مہذب ہے تو کشمیریوں پر اتنا ظلم کیوں ہو رہا ہے؟وہ پنجاب یونیورسٹی کے زیر اہتمام یوم کشمیر کے سلسلے میں اظہار یکجہتی کشمیر ریلی سے وی سی آفس کے سامنے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر پرووائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم مظہر، رجسٹرار ڈاکٹر محمد خالد خان، پروفیسر ڈاکٹر ممتاز انور چوہدری، فیکلٹی ممبران، انتظامی افسران، ملازمین، طلباؤ طالبات اورسکولوں کے بچوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اپنے خطاب میں وائس چانسلر پروفیسر نیازا حمد نے کہا کہ انسانی حقوق کے اداروں کو کشمیر اور بھارت میں اقلیتوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کے خلاف آواز بلند کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام اور حکومت جس طرح کوشش رہے ہیں کشمیریوں کو حق خود ارادیت مل کر رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی قرار داد منظور کر تی ہے کہ اقوام متحدہ کی قرار داد وں کے مطابق مسئلہ کشمیر کوفوری حل کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی امن کی خواہش کو کمزوری نہیں سمجھنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ یہ خطہ جنگ برداشت نہیں کر سکتا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی عوام پاک فوج، حکومت اور کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم مظہر نے کہا کہ دنیا میں جانوروں اور درختوں کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے بھی تنظیمیں کام کر رہی ہیں لیکن کشمیر میں انسانی جانوں پر ہونے والے ظلم و ستم پر کوئی آوازبلند نہیں کر رہا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت میں تمام اقلیتوں کے ساتھ ظلم ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نہتے کشمیریوں کو بنیادی انسانی حقوق سے محروم رکھا جا رہا ہے جو علاقائی نہیں بلکہ بین الاقوامی معاملہ ہے۔ریلی کے شرکاء نے کشمیریوں پر بھارتی ریاستی دہشت گردی کی سخت الفاظ میں مذمت کی اور مظلوم کشمیریوں سے مکمل اظہار یکجہتی کیا۔   





Comments


There is no Comments to display at the moment.



فیس بک پیج


اہم خبریں

تازہ ترین کالم / مضامین


نیوز چینلز
قومی اخبارات
اردو ویب سائٹیں

     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ آپکی بات محفوظ ہیں۔
Copyright © 2018 apkibat. All Rights Reserved